یرے انکار کرنے پر بھی اسلم اور اس کے چچا دونوں گھر سے نکل گئے۔ دونوں مارے گئے۔ آپ کہاں رہتے ہیں ؟ ٹی وی نہیں دیکھتے کیا؟ پولیس کو دونوں کی لاشیں مل گئی ہیں۔ ‘

میں گہرے سناٹے میں تھا۔ کچھ دیر کے لئے یہ یقین کرنا مشکل تھا کہ یہ حادثہ سچ مچ میں ہو چکا ہے۔ یہ میری زندگی کا اب تک کا سب سے دل دہلا دینے والا حادثہ تھا۔ میری آنکھوں میں اب تک اسلم شیخ کا چہرہ ناچ رہا تھا۔ ’کیا آپ اسے معمولی واقعہ سمجھتے ہیں ؟‘وہ واقعیسچ بول رہا تھا۔ لیکن اس وقت مجھے چکر آ رہا تھا۔ اچانک ساری دنیا گھومتی ہوئی نظر آ رہی تھی۔ وقت نے ہیرو اور ویلن کی، اب تک کی تمام تعریفوں کو بدل ڈالا تھا۔ ہم اس گلوبل تہذیب میں معنی کے نئے طول و عرض کا اضافہ کر رہے تھے۔

ایک دھند ہے /

اس دھندسے باہر ہمارا قتل ہو رہا ہے /

اس دھند میں کچھ بھی باقی نہیں ہے /

اس سیاہ دھند میں زندہ رہنا

اب تک کا سب سے بڑا جرم ہے /

٭٭

اس رات میں نے اپنی نوٹ بک میں صرف ایک جملہ لکھا۔ ’اور جاسوس مر گیا۔

میری آنکھوں کے آگے اس وقت بھی دھند کا ایک جنگل آباد تھا۔ اس دھند کے آر پار کچھ بھی دکھائی نہیں دے رہا تھا۔

٭٭٭

اُردو ناول پاکیزہ محبت

ٹینا کی مہندی

درد کی ٹیس

ارمان کی محبت

تارا کی شیطانی

Welcome Back!

Login to your account below

Retrieve your password

Please enter your username or email address to reset your password.