زبان زد عام توہمات

Zaban Zad Aam Tohmaat

زبان زد عام توہمات ہمارے ہاں توہمات کی بہتات ہے ایسی بہت سی توہمات کہہ لیں غلط فہمیاں کہہ لیں مشہور ہے جن کے متعلق ہمیں علم نہیں ہے بس ہم نے اپنی رائے قائم کر رکھی ہے. ایسی توہمات میں ایک یہ ہے کہ خربوز یا تربوز کھانے کے بعد پانی پینے سے ہیضہ ہوجاتا ہے. یہ ایک وہم ہے غلط فہمی ہے ایسا کچھ بھی نہیں ہوتا. ہیضہ فقط اسی صورت میں ہوسکتا ہے کہ خربوز یا تربوز میں بیکٹیریا ہوں یا پانی میں ایسے بیکٹیریا موجود ہوں جن سے یہ مرض لاحق ہو سکتا ہے. اسی طرح کسی کو کرنٹ لگنے کی صورت میں اس کو مٹی میں ڈال دیتے ہیں یا ریت اور مٹی میں دفنانے کی کوشش کرتے ہیں. افسوس کہ ایسا اکثر علاقوں میں کیا جاتا ہے. یہ جہالت ہے. کرنٹ لگنے کی صورت میں ابتدائی طبی امداد دینے کا ایک طریقہ ہے جس میں دل پر ہاتھ رکھ کر پمپنگ کی جاتی ہے اگر آپ اس سے ناواقف ہیں تو بہرصورت مریض کو کسی ڈاکٹر تک پہنچائیں تاکہ اس کا بروقت علاج کیا جا سکے. ایک اور غلط فہمی عام ہے کہ مچھلی کا گوشت کھانے کے بعد دودھ پینے سے برص کا مرض لاحق ہوتا ہے. انڈہ کھانے کے بعد چائے پینے سے بھی یہ بیماری لگتی ہے. یہ ایک غلط تاثر ہے. پھلبہری یا برص میلانن کی کمی سے ہوتی ہے. جس کا مچھلی کے گوشت کے ساتھ دودھ پینے کا کوئی تعلق نہیں ہے. اسی طرح اکثر لوگوں سے سنتے ہیں کہ برائلر مرغی کا گوشت مضر صحت ہے. یہ گوشت کھانے سے مردانہ کمزوری لاحق ہوتی ہے. انسان جلدی جوان ہوجاتا ہے وغیرہ وغیرہ. یہ بات درست نہیں ہے. برائلر مرغی کا گوشت نارمل غذا کی طرح ہے. اس سے کوئی خطرہ نہیں. برائلر انڈے اور دیسی انڈے کے نرغ مختلف بتائے جاتے ہیں اور یہ ابہام بھی عام ہے کہ برائلر مرغی کا انڈہ صحت بخش نہیں ہے. حالانکہ دونوں دیسی اور برائلر مرغی کے انڈوں میں غذائیت اور پروٹین ایک طرز کی ہوتی ہے.

Exit mobile version