زر زمین زیور بنا دوں گا

636026864903040891Zaiwer

زر زمین زیور بنا دوں گا دُعا سے آپ کی
اور دُکھ تیری حصے میں مجھ کو نہیں گھر چاہیے

 

گھر چلانے کے لیے لیکن سسر جی سال میں

چاہے جیسے بھی ہوں بس بارہ سیلنڈر چاہیے

 

زر زمین زیور بنا دوں گا دُعا سے آپ کی
اور دُکھ تیری حصے میں مجھ کو نہیں گھر چاہیے

 

بیگم نے رُعب مجھ پہ جماتے ہوئے کہا

ساتھی کو گھر بُلا کے حماقت نہ کیجیے

چینی کا دام بڑھ گیا ہے چونچ

اس لیے چائے نہیں ملے تو شکایت نہ کیجیے

 

ایسے ہرگز نہیں وہ سُدھرے گا

آؤ سوچیں علاج کیا ہو گا

جو بھی نفرت کی بات کرتا ہے

ایسے لیڈر کو پیٹنا ہو گا

 

یہ بد دماغ لوگ ذرا سوچیں چونچ جی

ویلنٹائن ڈے پہ جو پہرا لگائیں گے

چودہ گیارہ یعنی کہ بس نو مہینے بعد

پھر بال بھی بس بولیے کیسے منائیں گے

 

سلام علیک کرنے کے بجائے

وہ مہمانوں کو ھائی بولتے ہیں

عجب انگریز یہ تھائی ہیں بچے

خدا حافظ کو بائی بولتے ہیں

 

رُعب دُنیا پہ کچھ اس طرح جما لیتا ہے

اپنے قدموں میں زمانے کو جُھکا لیتا ہے

اور جس کو دیکھا نہ کبھی ہم نے تلاوت کرتے

وہ کسا کھانے کو قرآن اُٹھا لیتا ہے

 

شادی کا کھانا کھانا ہے لگ جاؤ لائن میں

تم کوٹکٹ کٹانا ہے لگ جاؤ لائن میں

ایک روز وہ بھی آئے گا جب یہ کہیں گے لوگ

بیگم سے ملنے جانا ہے لگ جاؤ لائن میں

 

کھا چُکے دھونکا بہت اب نہیں کھایا جائے

عقل کہتی ہے کہ اب ہوش میں آیا جائے

 اور یہ ہیں جاسوس یا مجرم انہیں سمجھوں کیسے

اب تو کُتّوں کا بھی ڈی این اے کرایا جائے

 

یہ ایک ساس نے لڑتے ہوئے بہو سے کہا

خدا کرے کہ تجھے کینسر چبا جائے

بہو بھی کم نہ تھی فوراً تراخ سے بولی

سونامی آئے لہر اور تجھ کو کھا جائے

 

https://www.facebook.com/chonch.gayavi.3/videos/303227473356943/

Exit mobile version